دبئی کی سڑک پر پیسے لٹانا امیر ترین نوجوان کو مہنگا پڑگیا ، مگر یہ شخص دراصل کس ملک کا شہری نکلا ؟

" >

دبئی(ویب ڈیسک) متحدہ عرب امارات کی ریاست دبئی کی سڑک پر پیسے لٹانا ایشیائی شہری کو مہنگا پڑ گیا۔خلیج ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق دبئی کی سڑک پر پیسے لٹانے والے ایشیائی شہری نے اپنی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل کی تو اسے دبئی پولیس نے گرفتار کرلیا۔یو اے ای کے شہری سوشل میڈیا پر اس طرح

کے اقدام سے گریز کریں دبئی پولیس کے مطابق ملزم کا کہنا ہے کہ اس نے یہ اقدام سوشل میڈیا پر شہرت حاصل کرنے کے لیے کیا، پولیس کی جانب سے مذکورہ شخص کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے۔پولیس میڈیا ڈیپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر سیکیورٹی کرنل فیصل القاسم کے مطابق عوام کو سوشل میڈیا کے حوالے سے اپنی ذمہ داریوں کا احساس کرنا ہوگا۔دبئی پولیس کی جانب سے یہ ظاہر نہیں کیا گیا ہے مذکورہ شخص جو کرنسی لٹا رہا تھا وہ اماراتی درہم ہیں یا کسی دوسرے ملک کی کرنسی ہے۔انہوں ںے کہا کہ شہری متحدہ عرب امارات کے قانون کی پاسداری کرتے ہوئے اس طرح کے اقدام سے گریز کریں۔کرنل فیصل القاسم نے کہا کہ یو ای اے میں اس طرح کی حرکت کرنے والوں کو بھاری جرمانے اور قید کا سامنا کرنا پڑسکتا ہےاس نوجوان کی اس حرکت کے بعد یہ فیصلہ کرنا مشکل ھے کہ سوشل میڈیا نے ہمیں کس امتحان میں ڈالا جیسے ہم برا نہیں کہہ سکتے مگر یہ اچھا بھی نہیں ایک طرف اسکے ذریعے معلومات کی فراہمی اور دوسری طرف اس سے اٹھنے والے پیچیدہ سماجی معاشرتی معاشی گھریلو مسائیل نے واقعی سب کو مشکل میں ڈال دیا میں صرف انٹرنیت پر گوگل سرچ میں وکی پیڈیا دینے کے بعد دنیا بھر کے نہ ختم ہونے والے علم و اگاہی کو دیکھا جاۓ جس نے تمام ڈکشنریوں کو الماریوں تک محدود کیا دوسری طرف سوشل میڈیا پر انسانی اقدار کی پامالی اور بے حرمتی دیکھ کر انسانیت سے دل اکتا جاتا ہے سوشل میڈیا نے اکیسویں صدی کے انسانوں پر کیا مثبت و منفی اثرات مرتب کئے اسکی ضرورت سے زیادہ استعمال کتنا خطرناک ہے اور اس نے سوسایٹی کو کس طرف دھکیلا یہ وہ سوالات ہیں جس کیلئے با قاعدہ ایک تحقیق کی ضرورت ہے تاہم سوشل میڈیا جب ان سوشل ہوجاتا ہے تو پریشانی بڑھتی ہے شاید ہمیں اس بات کا ادراک نہیں کہ ہمارا کوئی بھی بیج پوری دنیا میں دیکھا جاتا ہے ۔

(Visited 66 times, 1 visits today)