فرشتہ زیادتی و قتل کیس : فواد چوہدری بھی میدان میں آگئے۔۔۔ ننھی جان کے معاملے پر وا ویلا مچانے والی پی ٹی ایم کو منہ توڑ جواب دے ڈالا

" >

اسلام آباد (ویب ڈیسک) فرشتہ زیادتی و قتل کیس کے حوالے سے پورے ملک میں غم غصے کی لہر دوڑ پڑی ہے فرشتہ زیادتی و قتل کیس پر شرمناک سیاست کرنے پی ٹی ایم کو فواد چوہدری کا منہ توڑ جواب، ان کی سیاست کے سینے میں دل نہیں، یہ واقعات ہمارا

اجتماعی دکھ ہیں، قصور میں 9 بچیوں کا قتل ہوا پھر جا کے پرچہ کٹا لیکن کسی نے ایسی بیہودہ گفتگو نہیں کی جیسی یہ لوگ کر رہے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں زیادتی کے بعد قتل کر دیے جانے والی ننھی فرشتہ کے معاملے پر شرمناک سیاست کرنے والی پی ٹی ایم کو وفاقی وزیر فواد چوہدری کی جانب سے منہ توڑ جواب دیا گیا ہے۔PTM جس طرح ایک معصوم بچی کے بہیمانہ قتل کو اپنی دو ٹکے کی سیاست کے لئے استعمال کر رہی ہے اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ان کے سیاست کے سینے میں دل نہیں، یہ واقعات ہمارا اجتماعی دکھ ہیں، قصور میں نو بچیوں کا قتل ہوا پھر جا کے پرچہ کٹا کسی نے ایسی بیہودہ گفتگو نہیں کی جیسی یہ لوگ کر رہے ہیں فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ PTM جس طرح ایک معصوم بچی کے بہیمانہ قتل کو اپنی دو ٹکے کی سیاست کیلئے استعمال کر رہی ہے اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ان کے سیاست کے سینے میں دل نہیں ہے۔ یہ واقعات ہمارا اجتماعی دکھ ہیں۔ قصور میں نو بچیوں کا قتل ہوا پھر جا کے پرچہ کٹا کسی نے ایسی بیہودہ گفتگو نہیں کی جیسی یہ لوگ کر رہے ہیں۔ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے ننھی فرشتہ کے کیس میں ایس ایچ او شہزاد ٹائون اسلام آباد کی گرفتاری میں تاخیر کا سخت نوٹس لیتے ہوئے ڈی آئی جی آپریشنز اور انسپکٹر جنرل پولیس سے وضاحت طلب کر لی ہے۔ جبکہ ایس پی اسلام آباد کو او ایس ڈی بنا دیا ہے۔

وزیراعظم میڈیا آفس سے جاری بیان کے مطابق وزیراعظم نے ایس ایچ او شہزاد ٹائون کے خلاف فرشتہ کیس میں ایک روز قبل ایف آئی آر درج ہونے کے باوجود گرفتاری میں تاخیر کا سخت نوٹس لیا ہے اور ڈی آئی جی آپریشنز اور انسپکٹر جنرل پولیس سے اس کی وضاحت طلب کر لی ہے جبکہ انہوں نے سپرنٹنڈنٹ پولیس اسلام آباد کو او ایس ڈی کر دیا ہے۔ایس ایچ او شہزاد ٹائون، سب انسپکٹر محمد عباس رانا اور دیگر پولیس اہلکاروں کے خلاف دس سالہ بچی فرشتہ کے اغواء، قتل اور مبینہ زیادتی کی ایف آئی درج کی گئی تاہم ایک روز گزرنے کے باوجود ان کی گرفتاری عمل میں نہیں لائی جا سکی۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل آصف غفور نے بھی اسلام آباد میں دس سالہ معصوم بچی فرشتہ کے بہیمانہ قتل کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ معصوم بچی کے سفاکانہ قتل کے ذمہ داروں کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔ بدھ کو آئی ایس پی آر کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل آصف غفور نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر جاری اپنے بیان میں کہا کہ معصوم فرشتہ کے قتل پر پاک فوج ہر قسم کے تعاون کے لئے تیار ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں اپنی نسل کو شرپسند عناصر سے بچانے کے لئے متحد رہنا ہوگا۔ فواد چوہدری نے کہا کہ PTM جس طرح ایک معصوم بچی کے بہیمانہ قتل کو اپنی دو ٹکے کی سیاست کے لئے استعمال کر رہی ہے اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ان کے سیاست کے سینے میں دل نہیں،

(Visited 7 times, 1 visits today)