شاداب خان کو ہیپا ٹائٹس کیسے ہوا؟تشویشناک حقیقت سامنے آ گئی

" >

لاہور ( ویب ڈیسک ) قومی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی شاداب خان کی بیماری سے متعلق حیران کن انکشاف سامنے آیا ہے کہ انہوں نے دانت میں تکلیف کے بعد ایک عام دندان ساز سے علاج کرایا اور ڈینٹسٹ کے آلات سے شاداب خان کے خون میں ہیپاٹائٹس سی کے وائرس کی تشخیص ہوئی۔

اگر شاداب خان دانتوں کے کسی اچھے ڈاکٹر سے علاج کراتے تو انہیں ہیپاٹائٹس کا وائرس نہ لگتا، عام طور پر یہ وائرس حجام کی دکان اور ڈینٹسٹ کے آلات سے منتقل ہو جاتا ہے۔دانتوں میں تکلیف کے بعد شاداب خان نے راولپنڈی کے جس ڈاکٹر سے رجوع کیا ان کے آلات سے یہ وائرس ان کے جگر پر حملہ آور ہوا۔ورلڈ کپ روانگی سے قبل پی سی بی میڈیکل پینل نے جب تمام کھلاڑیوں کے خون کے نمونے لیے اور انہیں شوکت خانم ہسپتال کی لیبارٹری میں ٹیسٹ کرایا گیا تو پی سی بی میڈیکل پینل کو پتہ چلا کہ نوجوان کرکٹر کے خون میں ہیپاٹائٹس سی کا وائرس موجود ہے جس کے بعد دوبارہ ٹیسٹ کروا کر اس کی تصدیق کی گئی تاہم اس کے لیے نیا سیمپل نہیں لیا گیا تھا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ شاداب خان نے بتایا کہ انہوں نے چند دنوں قبل دانت میں تکلیف کے بعد پنڈی میں ایک دندان ساز سے رجوع کیا تھا جس کے آلات سے وائرس نے حملہ کیا۔تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ ٹیم کو دورہ انگلینڈ اورورلڈ کپ سے قبل بڑا جھٹکا لگ گیا اور آل راﺅنڈر شاداب خان ہیپا ٹائٹس کا شکار ہوکر دورہ انگلینڈ سے باہر ہوگئے جبکہ ان کی ورلڈ کپ میں بھی شرکت مشکو ک ہوگئی ہے۔پاکستان کرکٹ بورڈ کے مطابق دورہ انگلینڈ کیلئے شاداب خان کی جگہ یاسر شاہ کو کھلانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔شاداب خان کا میڈیکل ٹیسٹ مثبت آنے پر ٹیم سے باہر کیا گیا ہے۔ یاسر شاہ نے 24 ون ڈے میچز میں 23 وکٹیں لی ہیں۔

(Visited 35 times, 1 visits today)