کپتان کا انتخاب درست نکلا ۔۔۔وزیر اعلیٰ عثمان بزدار نے اپنی صلاحیت اور قابلیت ثابت کردی ، ایسا کام کر ڈالا کہ عمران خان بھی تعریف کرنے پر مجبور ہو گئے

" >

لاہور (ویب ڈیسک) وزیر اعلی بنے ڈھائی ماہ ہو گئے لیکن جنوبی پنجاب نہ گئے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب کا جنوبی پنجاب کا دورہ ایک بار پھر ملتوی ہو گیا۔تفصیلات کے مطابق سردار عثمان بزدار کو پنجاب کی وزارت اعلیٰ سونپنے پر موجودہ حکومت بالخصوص وزیراعظم عمران خان کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا لیکن،

وزیراعظم عمران خان اپنے اس فیصلے پر ڈٹے رہے اور کہا کہ چونکہ عثمان بزدار کا تعلق ایک پسماندہ علاقہ سے ہے، لہٰذا عثمان بزدار ہی بہترین انتخاب ہیں۔وزیراعلیٰ پنجاب بننے کے بعد سردار عثمان بزدار نے وزیراعظم عمران خان کا اپنے اوپر اظہار اعتماد کا شکریہ ادا کیا اور دن رات محنت میں لگ گئے۔ عثمان بزدارنے وزارت اعلیٰ کا منصب سنبھالنے کے بعد ایک دن کی چھُٹی بھی نہیں لی جس پر ان کی بیٹی نے بھی والد سے شکوہ کیا اور والد سے کہا کہ وہ گھر واپس آجائیں۔تاہم یہاں ایک بات قابل ذکر ہے کہ عثمان بزدار کو وزیر اعلیٰ پنجاب بنے ڈھائی ماہ ہو گئے ہیں لیکن انہوں نے اب تک جنوبی پنجاب کا دورہ نہیں کیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق عثمان بزدار کا جنوبی پنجاب کا دورہ ایک بار پھر ملتوی ہو گیا ہے۔خیال رہےو زیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے دوست احباب بھی ملاقات نہ کرنے پر ان سے ناراض ہیں۔ پچھلے دنون وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار سے ڈیرہ غازی خان سمیت مختفل شہروں سے آئے ہوئے شہریوں نے ملاقاتیں کیں۔ وزیراعلیٰ نے شہریوں کے مسائل اور ان کی تجاویز سنیں اور موقع پر ہی شہریوں کے مسائل کے لیے احکامات بھی جاری کیے۔

وزیراعلیٰ نے اپنے مسائل لے کر آنے والوں سے گھُل مل گئے اور ان سے ان کا احوال دریافت کرتے رہے۔ اسی ملاقات کے دوران ڈیرہ غازی خان کے ایک بزرگ شہری نے وزیراعلیٰ سے دریافت کیا کہ ”سائیں واپس کڈن آسو؟” جس پر وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے جواب دیا کہ میں عوام کو چھوڑ کر گھر کیسے آ سکتا ہوں۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ میں صوبے کے تمام شہروں کے مسائل حل کرنا چاہتا ہوں۔ پاکستان تحریک انصاف کا منشور عوام کی خدمت اور ملک میں تبدیلی لانا ہے۔ ہم شہریوں کے لیے آسانیاں اور سہولتیں پیدا کرنے کے لیے کوشاں ہیں۔ جبکہ دوسری جانب حکومت نے پنجاب میں 2 نئی ٹیکنیکل ایجوکیشن یونیورسٹیاں بنانے کافیصلہ کیا ہے ،نئی یونیورسٹیاں ڈیرہ غازی خان اورراولپنڈی میں بنائی جائیں گی۔میڈیا رپورٹس کے مطابق پنجاب حکومت نے بے گھر اور بے سہارا افراد کیلئے شیلٹر ہاﺅس تعمیر ، نوجوانوں کیلئے قرض سکیم کے اعلان کے بعد تعلیمی شعبے میں اقدامات اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے ،صوبائی حکومت پنجاب میں 2 نئی ٹیکنیکل ایجوکیشن یونیورسٹیاں قائم کریگی،نئی یونیورسٹیاں ڈیرہ غازی خان اورراولپنڈی میں بنائی جائیں گی،دونوں یونیورسٹیاں 6 ارب روپے کی لاگت سے قائم ہوں گی۔وزیر انڈسٹریز نے کہاہے کہ نئی یونیورسٹیوں کیلئے قانون سازی جلدہوگی۔

(Visited 798 times, 1 visits today)

اپنا تبصرہ بھیجیں