”بیانات سے ایسا ماحول بنا دیا جاتا ہے کہ ڈریسنگ روم میں ہم ۔۔۔“قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کا مخالفین کو کرارا جواب

" >

کراچی (ویب ڈیسک)ورلڈ کپ میں کپتانی کے حوالے سے میڈ یا پر چیئر مین پی سی بی احسان مانی کے بیانات کے بعد قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد بھی میدان میں آگئے ۔ان کا کہنا ہے کہ میری کپتانی کا فیصلہ پی سی بی کرے گا، بیانات سے ماحول ایسا بنادیا

جاتا ہے جو ٹیم پر اثرانداز ہوتا ہے۔نجی نیوز چینل اے آروائے نیوز کے پروگرام الیونتھ آور میں میزبان وسیم بادامی سے گفتگو کرتے ہوئے سرفراز احمد نے کہا کہ کرکٹ میں اچھا اور برا وقت چلتا رہتا ہے،بیانات سے ماحول ایسا بنادیا جاتا ہے جو ٹیم پر اثرانداز ہوتا ہے اور ڈریسنگ روم کا ماحول بھی خراب ہوتا ہے۔واضح رہے کہ چند روز قبل چیئر مین پی سی بی احسان مانی نے بیان دیا تھا کہ ورلڈ کپ میں کپتانی کے لیے سرفراز احمد کا نام حتمی نہیں ہے اس حوالے سے بات چیت جاری ہے جس کے بعد پاکستان ٹیم کے سابق کپتان مصباح الحق نے بھی سرفراز احمد کی حمایت کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ اب سرفراز احمد کی کپتانی پر کوئی بحث نہیں ہونی چاہیے، ورلڈکپ کے لئے سرفراز احمد ہی کو کپتان برقراررہنا چاہیے۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے کہا ہے کہ ون ڈے ٹیم کوبہتر کرنا ہے، ورلڈ کپ سے قبل 18 ون ڈے میچز کھیلنے ہیں۔ابوظبی میں ٹرافی کی رونمائی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ نیوزی لینڈ کےخلاف ون ڈے سیریز بہت اہم ہے،


کوشش ہےٹیم کو وننگ سائیڈمیں تبدیل کریں، موقع بھی ہےکہ جیت کےتسلسل کو آگے لے کر چلیں۔کیوی کپتان کین ولیم سن نے اس موقع پر کہا کہ ون ڈے ٹی20 سے بالکل مختلف فارمیٹ ہے، پاکستان یقیناً موجودہ کنڈیشنز میں بہت مضبوط ٹیم ہے، ہم نئی پلاننگ کے مطابق ون ڈے سیریز کھیلیں گے۔کین ولیم سن کا کہنا تھا کہ ٹرینٹ بولٹ کی شمولیت سے ٹیم مضبوط ہوگی، ٹیم کے حوصلے بلند اور پلیئرز پرجوش ہیں، پاکستان کےخلاف ون ڈے سیریز کےلیے تیاری مکمل ہے۔پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان تین میچوں پر مشتمل ایک روزہ انٹرنیشنل سیریز کا پہلا میچ ابوظبی میں کھیلا جائے گا۔دونوں ٹیموں کے درمیان اب تک 103 ون ڈے میچز کھیلے جاچکے ہیں، پاکستان نے 53 میں کامیابی حاصل کی جبکہ 47 میں شکست کا سامنا کرنا پڑا، ایک میچ ٹائی ہوا اور 2 بے نتیجہ رہے۔

(Visited 33 times, 1 visits today)

اپنا تبصرہ بھیجیں