حکومت پنجاب نے وسطی پنجاب کے25000 ہزار تعلیمی اداروں کیلئے ایسا شاندار قدم اٹھالیا۔ جان کر آپ بھی کہیں گے تبدیلی آنہیں رہی ، تبدیلی آگئی ہے

" >

لاہور(ویب ڈیسک) حکومت پنجاب صوبے کے تعلیمی اداروں کو سہولیات دینے کیلئے پرعزم ہے ۔ صوبائی وزیر برائے توانائی اختر رضا ملک نے پنجاب پاور ڈیویلپمنٹ بورڈ کے آفس میں ایشین ڈیویلپمنٹ بنک کے وفد سے ملاقات کی۔ ملاقات میں وسطی پنجاب کے آف گرِڈ سکولوں کو سولر انرجی پر منتقل کرنے کے منصوبے پر کامیاب مذاکرات ہوئے۔

تفصیلات کے مطابق ایشین ڈیویلپمنٹ بنک کے وفد نے وسطی پنجاب کے مختلف اضلاع میں بجلی سے محروم سکولوں کو شمسی توانائی پر منتقل کیے جانے کے منصوبے کے لیے 10 ملین ڈالرز کی امداد کا وعدہ کیا۔ منصوبے کی تفصیلات کے مطابق تقریباً 25000 سکولوں کوشمسی توانائی پر چلایا جائے گا۔ اس منصوبے کا پہلا مرحلہ مکمل کیا جا چکا ہے۔ موجودہ پیکج میں ملتان، ڈیرہ غازی خان اور بہاولپور ڈویژنز کے اضلاع کے تقریباً 10000 سکولوں کو بتدریج شمسی توانائی مہیا کرنے کے لیے سسٹم لگایا جائے گا۔ منصوبے کی تکمیل پر تقریباً 1.7 ملین طلباء وطالبات بالواسطہ مستفید ہونگے۔ منصوبے کی افادیت پر اظہارِ خیال کرتے ہوئے صوبائی وزیر برائے توانائی اختر رضا ملک نے کہا کہ انرجی اور سکول ڈیپارٹمنٹ کے اس مشترکہ پراجیکٹ سے وسطی پنجاب کے بجلی سے محروم علاقوں کے طلباء وطالبات کو حصولِ علم میں سہولت ہوگی۔ ان علاقوں کے سخت گرم موسم میں سٹوڈنٹس بغیر پنکھوں اور لائٹس کے پڑھتے ہیں جس سے انکو علم حاصل کرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ شمسی توانائی کے اس منصوبے کی تکمیل سے علاقے کے لوگوں کا معیارِ زندگی بہتر ہو گا اورطلباء وطالبات معیاری ماحول میں تعلیم حاصل کر سکیں گے۔

صوبائی وزیر برائے توانائی نے مزید کہا کہ چھٹیوں کے دنوں میں سولر سسٹم سے پیدا ہونے والی بجلی دیگر مقاصد کے لیے بھی استعمال کی جا سکے گی جس کے لیے منصوبہ بندی کی جا رہی ہے۔ اختر رضا ملک نے کہا کہ ملک کو توانائی کے معاملے میں خود کفیل بنانے کا عزم لے کر حکومت میں آئے ہیں اور اس سلسلے میں غیر روایتی طریقوں سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں پر زیادہ سے زیادہ کام کیا جائے گا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ گورنر پنجاب کی ہدایات کے مطابق پنجاب کی تمام یونیورسٹیوں کو مرحلہ وار شمسی توانائی پر منتقل کیا جائے گا اور اس سلسلے میں اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کو 2.5 میگا واٹ کے شمسی توانائی منصوبے پر منتقل کرنے پر غورو خوض جاری ہے۔ صوبائی وزیر برائے توانائی نے یہ بھی کہا کہ سکولوں کو سولر انرجی پر منتقل کرنے کے عمل کی از خود نگرانی کروں گا۔ روزانہ کی بنیادوں پر پراگریس رپورٹ لی جائے گی۔حکومت پنجاب تعلیمی اداروں کو پہلی ترجیح میں رکھتے ہوئے ان کے مسائل حل کرے گی۔ وزیر توانائی نے صوبے کی توانائی کی ضروریات کو پورا کرنے کا عزم بھی کیا۔ان کا کہنا تھا کہ حکومت صوبے میں بجلی کے بحران کو ختم کرکے دم لے گی۔

(Visited 1,571 times, 6 visits today)

اپنا تبصرہ بھیجیں